Our Beacon Forum

Re: THE REVOLTIG KASHMIRIS & SIKHS
By:Javed Rashid, Mirpur AK
Date: Monday, 21 October 2019, 6:14 pm
In Response To: THE REVOLTIG KASHMIRIS & SIKHS (Sonia Aslam, Mirpur AK)

South Asian Wire
To: news@southasianwire.com
امریکہ :1984 میں سکھوں کی نسل کشی کی یادگار کو ہٹا دیا گیا
اس یادگار میں خالصتانی رہنما جرنیل سنگھ بھنڈروالے کی ایک نمایاں تصویر تھی

نیویارک ،21 اکتوبر2019(ساؤتھ ایشین وائر ):
کنیکٹی کٹ کے نوروچ میں واقع اوٹس لائبریری میں ہندوستان کے 1984 آپریشن بلیو سٹار کے دوران فسادات میں سکھوں کی نسل کشی کی یادگار کوہندوستانی حکومت کے دباؤپر ہٹا دیا گیا ہے۔ریاستہائے متحدہ امریکہ میں یہ یادگار اپنی نوعیت کی واحد عمارت تھی۔
ساؤتھ ایشین وائر کے مطابق تین ماہ قبل ، کنیکٹی کٹ کے نوروچ میں واقع اوٹس لائبریری نے 35 سال قبل بڑے پیمانے پر تشدد کے نتیجے میں ہندوستان میں مارے جانے والے ہزاروں سکھوں کی یادگار نصب کی تھی۔
یہ یادگار سکھ پرچم ، سکھ انقلابی جرنیل سنگھ بھنڈروالے کے مجسمے اور 1984 میں ہونے والے قتل عام سے متاثرہ سکھوں کے اعزاز میںلوح پر مشتمل تھی جسے خاموشی سے لائبریری سے ہٹا دیا گیا۔
مقامی میڈیا کے مطابق ، نیو یارک میں انڈیا کے قونصل جنرل نے لائبریریوں کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر کو میموریل پر تبادلہ خیال کرنے کے لئے بلایا۔
لائبریری بورڈ آف ٹرسٹیز کے صدر نکولس فورٹسن نے ساؤتھ ایشین وائرکو بتایا ، "اوٹس لائبریری اور نورویچ یادگار کمیٹی نے مشترکہ طور پر تختی ، جھنڈے اور تصویر ہٹانے پر اتفاق کیا ہے۔"
شہر کی سکھ برادری کے رہنما اور مقامی کاروباری شخصیت، سورنجیت سنگھ خالصہ نے اس یادگار کو عطیہ کیا تھا۔ رئیل اسٹیٹ میں کام کرنے والے بزنس مین اور مقامی گیس اسٹیشن کے مالک سورنجیت سنگھ نے اس واقعے کے رد عمل میں کہا کہ لائبریری غیر سیاسی ہونا چاہئے لیکن انہوں نے ہندوستانی حکومت کے دبا ؤپر ایک سیاسی فیصلہ کیا۔ بہت سارے لوگوں کے دلوں میں بہت درد ہوتا ہے اور ہم اپنی کہانیاں بانٹ نہیں سکتے۔ ہمارے کوئی حقوق نہیں ہیں ۔انہوں نے کہا کہ امریکہ میں ایسا ہوتا دیکھ کر افسوس ہوا۔سورنجیت سنگھ خالصہ کوایف بی آئی کی جانب سے سکھ بیداری کی بہت سی مہموں اور سیاسی مصروفیات کے اقدامات کے سلسلے میں کافی سراہا جاتاہے۔
لائبریری کے عہدیداروں نے تصدیق کی کہ اوٹیس لائبریری کواس سے قبل ہندوستانی قونصل خانے سے کال موصول ہوئی تھی تب نورویچ یادگار کمیٹی نے یادگار ہٹانے کا فیصلہ کیا ۔
تختی ، جھنڈے اور پورٹریٹ سورنجیت سنگھ خالصہ کو واپس کردی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کی بجائے اس یادگار کو سٹی ہال منتقل کیا جاسکتا ہے۔
ساؤتھ ایشین وائر کے مطابق کنیکٹی کٹ میں ایک چھوٹی سی سکھ کمیونٹی ہے جس کے پانچ گردوارے اور تقریبا 400 خاندان ہیں۔ پچھلے سال ، کنیکٹ کٹ 1984 کے سکھوں کے قتل عام کو نسل کشی کے طور پر تسلیم کرنے والی پہلی امریکی ریاست بنی جب اس نے 30 نومبر کو سکھوں کی نسل کشی کے یاد کے دن کے نام سے سینٹ میں بل 489 منظور کیا۔ ریاست نے یکم جون کو سکھ میموریل ڈے اور 14 اپریل کو قومی سکھ ڈے کے طور پر بھی نامزد کیا ہے۔

Messages In This Thread

THE REVOLTIG KASHMIRIS & SIKHS
Sonia Aslam, Mirpur AK -- Monday, 21 October 2019, 6:05 pm
Re: THE REVOLTIG KASHMIRIS & SIKHS
Javed Rashid, Mirpur AK -- Monday, 21 October 2019, 6:14 pm